تازہ ترین

پی ٹی آئی بیلجیئم کی الیکشن ترمیم پر شدید تنقید

اسلام آباد (سن نیوز)پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) بیلجیئم نے شہباز حکومت کی جانب سے اوورسیز کے ووٹ کے حق کو واپس لینے کیلئے کی جانے والی ترمیم پر شدید تنقید کرتے ہوئے اسے اوورسیز پاکستانیوں کی توہین قرار دیا ہے۔اس حوالے سے برسلز کے نواح میں پی ٹی آئی بیلجیئم کی مقامی قیادت نے غلام ربانی بابو کی صدارت میں ایک مذمتی اجلاس منعقد کیا۔انہوں نے کہا کہ اس حکومت نے اقتدار میں آتے ہی ہمارے ووٹنگ کے حق پر ڈاکہ ڈالا ہے، ہمیں یہ حق آئین پاکستان نے دیا ہے، ہم اس حق کو سرنڈر نہیں کریں گے۔اجلاس کے مقررین نے پاکستان پیپلز پارٹی کے سابق صدر آصف زرداری کے اس بیان پر بھی شدید ردعمل کا اظہار کیا کہ اوورسیز گمراہ ہیں اور انہیں پاکستان کے زمینی حقائق کا نہیں پتا۔مقررین نے کہا کہ اوورسیز رات کو اپنا وطن اپنی آنکھوں میں سجا کر سوتے ہیں، انہیں ہی تو صحیح ادراک ہے کہ ساری اشرافیہ ملکر اس ملک کے ساتھ کر کیا رہی ہے؟۔انہوں نے سابق وزیر اعظم عمران خان کے اس خیال کو جائز قرار دیا کہ یہ حکومت اپنے مقدمات کو سیٹل کرنے کیلئے اقتدار میں آئی ہے، اسی لیے نیب اور دیگر اداروں میں غیر قانونی چھیڑ چھاڑ جاری ہے۔مقررین نے اس بات پر بھی افسوس کا اظہار کیا کہ موجودہ حکومتی عہدیداروں کی اکثریت پر الزامات ہیں جس کا مہذب دنیا کے کسی اور ملک میں تصور بھی نہیں کیا جا سکتا اور یہی وہ وجہ ہے جس کے باعث اوورسیز اس قیادت کو دیکھ کر شرمندگی محسوس کرتے ہیں۔اس اجلاس کے مقررین نے اس عزم کا اظہار کیا کہ سابق وزیر اعظم عمران خان کی بھرپور حمایت جاری رکھی جائے گی۔اس موقع پر جن مقررین نے اظہار خیالات کیا ان میں غلام ربانی بابو، شکیل گوہر، شیخ کاشف، ناصر ناہرہ، راجہ طارق، آصف برلاس، مہر عبدالمالک، طاہر فیاض کھوکھر ایڈووکیٹ، ذیشان علی، ڈاکٹر ساجد حسین، راجہ مظہر، ندیم احمد اور راجہ شوکت شامل تھے۔خیال رہے کہ دو روز قبل قومی اسمبلی نے الیکشن ترمیمی بل 2022 منظور کیا تھا، الیکشن ترمیمی کے تحت الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) اور اوورسیز ووٹنگ سے متعلق گزشتہ حکومت کی ترامیم ختم کردی گئی ہیں۔