تازہ ترین

سائنس دانوں نے آکسیجن پیدا کرنے والا پینٹ بنالیا

سرے – سائنس دانوں نے زندہ سیانو بیکٹیریا کا حامل ایک ایسا پینٹ بنایا ہے جو کاربن ڈائی آکسائیڈ کو کشید کرنے کے ساتھ آکسیجن پیدا کرسکتا ہے۔

برطانیہ کی یونیورسٹی آف سرے کے محققین نے پانی پر مبنی آکسیجن بنانے والا اور کاربن ڈائی آکسائیڈ کشید کرنے والا ایک پینٹ بنایا ہے جس میں سیانو بیکٹیریا کی ایک قسم شامل کی گئی ہے۔ سائنس دانوں نے اس پینٹ کو ’گرین لِونگ پینٹ‘ کا نام دیا ہے۔

پینٹ میں شامل کیے گئے اس بیکٹیریا کی سخت ماحول کو برداشت کرنے کی صلاحیت اس نئے پینٹ کو خلا سمیت متعدد جگہوں پر استعمال کیے جانے کے قابل بناتی ہے۔
گرین ہاؤس گیسز کے اخراج میں اضافہ اور اس کے نتیجے میں پیدا ہونے والے موسمیاتی بحران نے سائنس دانوں اس نئی اختراع کے متعلق سوچنے پر مجبور کیا جبکہ سبز، نیلی، الگئی یعنی سیانو بیکٹیریا کو اس کی ضیائی تالیفی خصوصیات کی وجہ سے نئے سبز مٹیریل کے لیے ایک جزو کے طور پر تجویز کیا جا رہا ہے۔

سیانو بیکٹیریا ضیائی تالیف کے عمل کی مدد سے کاربن ڈائی آکسائیڈ کو آرگینک مرکبات میں بدلتے ہیں اور ناموافق ماحول میں انتہائی مؤثر انداز میں یہ کام کر سکتے ہیں۔ مزید برآں ان کی نمو تیزی سے ہوتی ہے اور ان کو جینیاتی طور پر بدلا بھی جاسکتا ہے۔

تحقیق کی مصنفہ سوزی ہِنگلے ولسن کے مطابق ماحول میں گرین ہاؤس گیسز بالخصوص کاربن ڈائی آکسائیڈ کی مقدار میں اضافے اور بڑھتے ہوئے عالمی درجہ حرارت کے سبب ہونے والی پانی کی قلت کے پیشِ نظر ہمیں ماحول دوست اور پائیدار مٹیریل چاہیئں۔

ان کا کہنا تھا کہ تکنیکی اعتبار سے مضبوط اور استعمال کے لیے تیار ’زندہ پینٹ‘ پانی کی کھپت کم کرتے ہوئے درپیش ان مشکلات سے نمٹنے میں مدد دے سکتے ہیں۔