تازہ ترین

شدید بارش اور پہاڑوں پر برف باری کے باعث سردی کی شدت میں مزید اضافہ، ملک بھر کے بڑے شہروں میں گیس کی بندش کے باعث شہری ذلیل و خوار ہوگئے

مظفر آباد /گلگت /اسلام آباد/پشاور/کوئٹہ/کراچی/لاہور ( سن نیوز)آزاد کشمیر ، گلگت بلتستان اور وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں شدید بارش اور پہاڑوں پر برف باری کے باعث سردی کی شدت میں مزید اضافہ ہوگیا ،برف باری کے باعث رابطہ سڑکیں بند ہونے سے عوام کو مشکلات کا سامنا کر نا پڑا ، مری سمیت کئی سیاحتی مقامات پر لوگوں کی بڑی تعداد امڈ آئی ،گنجائش سے زیادہ گاڑیاں مری میں داخل ہوگئیں ، ٹریفک پولیس نے بھی پلان اور ہیلپ لائن جاری کر دی، سردی کی شدت بڑھنے کے باعث گیس کی لوڈشیڈنگ بھی عروج پر پہنچ گئی ،وفاقی دارالحکومت اسلامآباد ، راولپنڈی ، کراچی سمیت ملک بھر کے بڑے شہروں میں گیس کی بندش کے باعث شہری ذلیل و خوار ہوگئے ،لکڑی اور ایل پی جی کی قیمتیں بھی آسمان سے باتیں کر نے لگیں ۔ تفصیلات کے مطابق زاد کشمیر ، گلگت بلتستان اور وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں شدید بارش اور پہاڑوں پر برف باری کا سلسلہ دوسرے روز پیر کو بھی جاری رہا جس کے باعث سردی کی شدت بڑھ گئی ۔ محکمہ موسمیات کے مطابق ملکہ کوہسار مری میں بھی برفباری نے رنگ جما دیا،خآسمان سے چاندی برستے ہی سیاحوں کی بڑی تعداد نے مری کا رخ کیا اور خوب انجوائے کرتے دکھائی دیئے۔ سی ٹی او راولپنڈی تیمور خان کی سربراہی میں ٹریفک وارڈنز سیاحوں کی خدمت میں پیش پیش رہے ۔جاری اعلامیہ کے مطابق ڈی ایس پی ٹریفک مری اجمل ستی خود آن فیلڈ ٹریفک وارڈنز کے ساتھ سیاحوں کی مدد اور رہنمائی کے لیے موجود رہے ۔ ترجمان ٹریفک پولیس کے مطابق مری میں گزشتہ رات تک 60560گاڑیوں داخل ہوچکی ہیں،مری میں صرف 3500گا ڑیوں کی پارکنگ کی گنجائش ہے۔ ٹریفک پولیس کے مطابق پارکنگ کی کمی اور سلیپری روڈ ہونے کے باوجود ٹریفک وارڈن بھرپور انداز میں ٹریفک کی روانی کو برقرار رکھے ہوئے،ٹریفک پولیس برف باری کے دوران 700 سے زائد سیاحوں کو آن گرائونڈ مدد بھی فراہم کی،ترجمان کے مطابق سیاحوں کی سہولت کے لیے ٹریفک پولیس فری ٹو ٹرک سروس بھی فراہم کر تی رہی ۔سی ٹی او راولپنڈی کے مطابق سیاحوں کی سہولت کے لیے ٹریفک اہلکار صبح تک اضافی اوقات میں بھی ڈیوٹی سر انجام دیتے رہے،پارکنگ کی کمی کے باعث مخصوص جگہوں پر سنگل لائن میں پارکنگ کروائی جا رہی ہے۔ ٹریفک پولیس کے مطابق سیاح حضرات پارکنگ کی کمی کے باعث گاڑی کو مناسب جگہ پر پارک کریں تاکہ ٹریفک کے بہاؤ میں خلل پیدا نہ ہو۔ سی ٹی او تیمور خان کے مطابق مری کی تمام روڈز پر دو-طرفہ ٹریفک چلتی ہے لہذا ڈبل لائن بنانے سے گریز کریں، مری میں احتیاط سے ڈرائیونگ کریں اور صبر وتحمل سے کام لیں،دوران ڈرائیو نگ ٹریفک قوانین پر سختی سے عمل کریں، سی ٹی او راولپنڈی کے مطابق روڈ پر گاڑی کھڑی کر کے سلفیاں نہ بنائیں،سرکل مری میں کسی بھی جگہ ٹریفک پرابلم پیش آنے کی صورت میں ہیلپ لائن 0519269200پر رابطہ کریں ۔ ادھر آزاد کشمیر کے علاقے باغ میں بھی بارش اور برفباری کا سلسلہ جاری رہا۔ تیز بارش اور برفباری کے باعث معمولات زندگی متاثر ہوئی، دفاتر میں حاضری کم، باغ کے بالائی علاقے تولی پیر، لسڈنہ، حاجی پیر اور گنگا چوٹی کی رابطہ سڑکیں مکمل بند ہوگئیں جس کے باعث عوام کو شدید مشکلات کاسامنا رہا ۔دریں اثناء سوات، مالم جبہ، مہوڈنڈ، کالام، گبیں جبہ میں دوسرے روز بھی وقفے وقفے سے برف باری جاری رہی، ہر طرف سفیدی چھا گئی، کالام میں درجہ حرارت منفی چارڈگری سینٹی گریڈ تک گر گیا، سوات میں برف باری سے ہرطرف سفیدی چھاگئی۔دوسری جانب بلوچستان کے شمالی علاقوں میں بارشوں اور برف باری کے بعد سردی کی شدت میں مزید اضافہ ہوا ہے، آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران آواران ، لسبیلہ، کیچ، پنجگور، خضدار اور ساحلی علاقوں میں بارش متوقع ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق وادی کوئٹہ اور گردونواح میں مطلع صاف اور موسم سرد رہا، دو روز قبل ہونے والی بارش اور پہاڑوں پر ہلکی برف باری کے بعد سردی کی شدت میں پھر سے اضافہ ہوا ہے، صبح کم سے کم درجہ حرارت منفی 1 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔قلات میں درجہ حرارت منفی4،ڑوب میں 1، سبی میں3، خضدار میں 5اور پنجگور میں درجہ حرارت 10ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا، صوبے کے بیشتر اضلاع میں موسم سرد اور بعض علاقوں میں جزوی ابر آلود رہنے کے ساتھ آواران ، لسبیلہ، کیچ ، پنجگور، خضدار اور ساحلی علاقوں میں بارش کا امکان ہے۔ادھر صوبائی دارالحکومت کراچی کے بیشتر علاقوں میں صبح سویرے موسم سرما کی پہلی بارش کا آغاز ہوا ،کراچی کے علاقوں اورنگی ٹاؤن، نارتھ ناظم آباد، ناظم آباد، فیڈرل بی ایریا، صدر، کھارادر، ملیر، شارع فیصل، ایم اے جناح روڈ، برنس روڈ کے اطراف وقفے وقفے سے ہلکی کہیں تیز بارش کا سلسلہ جاری رہا۔چیف میٹ سردار سرفراز کے مطابق کراچی میں زیادہ سردی نہیں آئے گی، درجہ حرارت سنگل ڈیجٹ میں آنے کا امکان نہیں، شہر میں مجموعی طور پر ہلکی بارش کی صورتحال رہے گی تاہم کل صبح کے بعد سے بارش کا سلسلہ ختم ہو جائے گا۔چیف میٹ سردار سرفراز نے کہاکہ سائیبیرین ہوائوں کو مغرب سے آنے والی ہوائوں نے ہٹا دیا ہے، تاہم بار ش، برفباری لانے والی ہوائوں کا تسلسل آتا رہے گا۔سردار سرفراز نے بتایا کہ پورے ملک سے سائیبیرین ہوائیں ہٹی ہوئی ہیں، کراچی میں رات کا درجہ حرارت 12،13سینٹی گریڈ تک گر سکتا ہے، بلوچستان میں 31دسمبر یا یکم جنوری سے ایک اور لہر آئے گی تاہم کراچی میں جنوری کے شروع کے 10 دن تک سردی کی باقاعدہ لہر نہیں آئے گی۔چیف میٹ نے بتایا کہ گلوبل وارمنگ کے باعث کراچی کا بھی درجہ حرارت بڑھ رہا ہے،شہر میں مطلع ابر آلود اور گرج چمک کے ساتھ وقفے وقفے سے بارش کا امکان ہے، شہر کا کم سے کم درجہ حرارت 16 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جبکہ کم سے کم درجہ حرارت 12 سے 14ڈگری سینٹی گریڈ رہنے کا امکان ہے۔کراچی کی ہوا میں نمی کا موجودہ تناسب 85 فیصد ہے، شمال مشرق سے 14 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں چلتی ر ہیں انہوں نے کہا کہ یکم جنوری سے ملک میں اچھی بارش ہونے کی توقع ہے، شہر قائد میں شام، رات اور منگل کی صبح تک بارش وقفے وقفے سے جاری رہے گی ، دن کے دوران وقفے وقفے سے بارش ہوتی رہے گی۔ سردار سرفراز کاکہنا تھا کہ سندھ کے زیادہ تر علاقوں اور شمال میں بھی کل تک ہی بارش کاسلسلہ رہے گا ،لاہور میں اگر مزید بارش ہوئی تو وہ ہلکی ہی ہوگی مگر دھند کی صورتحال پر زیادہ اثر نہیں پڑے گا۔انہوں نے کہاکہ تھوڑی بارش ہو تو نمی فضا میں ٹھہر کر صورتحال اور خراب کردیتی ہے، چار پانچ جنوری تک گہری دھند کا سلسلہ چھٹ جانے کی امید ہے ۔ دوسری جانب کراچی، لاہور، اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور سمیت ملک کے چھوٹے بڑے شہروں میں گھریلو صارفین کے لیے گیس کی قلت برقرار رہی جس کے باعث شہری رل گئے اور کئی لوگوں کو بغیر ناشتے کے دفتر جانا پڑا ۔ اطلاعات کے مطابق ملک کے کئی علاقوں میں اب بھی گیس بحران میں کمی نہ آسکی،گیس پریشر میں کمی سے ہوٹل والے بھی پریشان ہوگئے ۔گیس بندش اور پریشر میں کمی کے باعث کھانا پکانے کے لئے ایل پی جی کے استعمال کے باعث اسکی قیمتیں بھی بڑھ گئی ہیں جس سے شہریوں کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔دوسری جانب کراچی میں گھریلو صارفین کے لئے اگلے ہفتے سے گیس کی فراہمی بہتر ہونے کی امید ہے۔ایم ڈی سوئی سدرن گیس کمپنی کے مطابق صنعتوں کو ہفتہ وار 36 گھنٹے گیس نہ استعمال کرنے کی درخواست کی ہے تاکہ گھریلو صارفین کی گیس کا پریشر بہتر ہو سکے۔واضح رہے کہ کراچی میں گیس کے بحران پر شہر سے تعلق رکھنے والے پی ٹی آئی کے تین ممبران قومی اسمبلی نے حماد اظہر پر تنقید کرتے ہوئے انہیں برطرف کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں