تازہ ترین

ای وی ایم کا استعمال اور آئی ووٹنگ بڑے چیلنج ہوں گے

اسلام آباد( سن نیوز) منقسم انتخابی اصلاحات، الیکٹرونک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم) کا استعمال اور آئی ووٹنگ بہت بڑے چیلنجز ہیں۔ الیکشن کمیشن اس انتخابی عمل کو شفافیت اور منصفانہ ہونے کے خلاف سمجھتا ہے۔ دستور سازی کو روند کر ای وی ایم کے استعمال اور آئی ووٹنگ کا آئندہ عام انتخابات کے لئے قانون کا نافذ کیاجانا، تاہم اس کو حقیقت اور عملی شکل دینا بڑی کٹھن آزمائش ہوگی خود الیکشن کمیشن نے ان دفعات کی سختی سے مخالفت کی اور اس کی قابل اعتبار وجوہ بھی ہیں۔ پارلیمنٹ سے جو کوئی بھی انتخابی قانون منظور ہوتا ہے اس پر عمل درآمد کرانا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہوتی ہے۔ یہ بات نہایت اہم ہے کہ جب آئندہ عام انتخابات ہوں گے، موجودہ حکومت اس وقت برسراقتدار نہیں ہوگی، نگراں حکومت کی زیر نگرانی عام انتخابات کرائے جائیں گے۔ دوسرا چیلنج ای وی ایم کااستعمال ہوگا جنہیں شیطانی مشینیں تصور کیا جارہا ہے۔ آئی ووٹنگ کا معاملہ بھی سپریم کورٹ میں چیلنج کئے جانے پر اٹھ سکتا ہے۔ عدالت فطری طور پر الیکشن کمیشن سے موقف مانگے گی اپوزیشن جماعتیں کہہ چکیں کہ وہ مذکورہ قانون سازی کوعدالت میں چیلنج کریں گی۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے اپنے موقف سے پیچھے ہٹنے کا امکان نظر نہیں آتا۔

اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں